ڈیپریشن صرف ایک لفظ ہے اور کچھ نہیں۔

  •   0
  •   Naveed Khan
  •   0
  •   684
ڈیپریشن کا لفظ آج کل اتنا عام هے هر کوئی بغیر سوچے سمجھے اس کا استعمال کرتا ہؤا نظر آتا ہے۔ سوال یہ اٹھتا ہے کہ آخر ڈیپریشن ہے کس بلا کا نام ؟

ڈیپریشن کا لفظ آج کل اتنا عام هے هر کوئی بغیر سوچے سمجھے اس کا استعمال کرتا ہؤا نظر آتا ہے۔ سوال یہ اٹھتا ہے کہ آخر ڈیپریشن ہے کس بلا کا نام ؟
میرے مطابق ڈیپریشن صرف بے بسی اور مایوسی کا نام هے اور کچھ بھی نہیں۔ اس کی مثال یوں ہے کہ آپ نے ایک کام کے متعلق کچھ سوچا اور پھر بہتر طریقے سے اس کی پلینیگ کی کہ اپنا یه کام میں اس طریقے سے کر کے بہترین اور کامیاب رزلٹ حاصل کر لوں گا مگر نتیجہ اس کے برعکس آتا ہے اور ویسا هوتا نہیں جیسا آپ نے سوچا ہوتا ہے. اس کا آپ کی ذات پر ایک منفی اثر پڑتا اور آپ اپنی اس ناکامی کا ذمہ دار یا تو خود اپنی ہی ذات خو ٹھہرانا شروع کر دیتے ہیں یا دوسرے آپ کی نظر میں قصوروار بن جاتے ہیں۔ اس طرح آپ ذہنی اور جسمانی طور پر اپنے آپ کو تھکا دیتے هیں. آپ اپنی ذات کے اندر ایک blame game شروع کر دیتے ہیں اور اپنی اس ناکامی کو اپنے اعصاب پر اس حد تک سوار کر لیتے ہیں که اپنی صحت خراب کر لیتے ہیں اور بیمار هوجاتے هیں. اس سارے عمل کے دوران آپ سے جڑا ہر فرد خاص طور پر گھر والے , بچے اور دوست احباب ڈسٹرب هوجاتے هیں.


اگر ہم اپنے مذہب کی رو سے دیکھیں تو جتنے بھی انبیاء کرام اور صحابه کرام دنیا میں تشریف لائے سب کو کسی نہ کسی وقت میں بے انتہا مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور اس کے باوجود وه کبھی بھی ڈیپریشن کا شکار کیوں نهیں هوۓ ؟
اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ کیا کوئی مسلمان الله سبحان وتعالی کے هوتے هوۓ بے بسی اور مایوسی کا شکار هو سکتا هے ؟ اور کیا کوئی ایک ایمان الله سبحان وتعالی کی ذات کو جانتے هوۓ اسکی رحمت سے مایوس هوسکتا هے ؟
میرے خیال کے مطابق ڈیپریشن کی بہت ساری وجوهات هیں۔


* ہر اچھے برے حالات میں شکوه کرتے رهنا
*اپنی مرضی سے ہٹ کر کوئی کام یا بات برداشت نه کرنا
* ہر بات ، کام اور چی۔ز میں صرف پرفیکشن کو معیار سمجھنا اور پھر مایوسی کا شکار رهنا۔
* یہ بات دماغ میں بٹھائے رکھنا کہ ماضی ، حال سے بہت بہتر تھا۔
* انا پرستی بھی انسان کو ڈیپریشن کا مریض بنا دیتی ہے۔
*مرضی سے ہٹ کر نتائج ملنا۔
* حد سے زیاده حساس هونا۔
یہ سب عوامل تب ہی وقوع پذیر ہوتے ہیں جب ہمارا اپنے خالق سے یقین آٹھ جاتا ہے۔
تقدیر پر کمزور ایمان
اللہ پر توکل کی کمی


یہ بات دماغ میں رکھیں کہ جہاں الله سے تعلق کمزور هوا وهیں شیطان نے اپنا شکار بنا لیا اور جو مایوس ہونا شروع ہؤا اسے مزید مایوس کر دیا۔انسان میں نا شکرا پن اس قدر بڑھ جاتا هے که اسے نعمتیں میسر ہوتی ہیں وہ بھی چھوٹی لگنے لگتی هیں۔ اور سوچ کا محور بس وہیں تک رہ جاتا کہ اسے جو چاهیے یا جو چیز نہیں هوتی۔ وهی حسرت دل, دماغ یهاں تک که جسم کو بھی جکڑ کے رکھ دیتی ہے۔ انسان ایسی صورت حال میں صرف اپنی سوچ کے غلام هو کر ره جاتا ہے۔


الله تعالی فرماتے هیں که
* میں نے زندگی موت بنائی جو آزمائش هے...
* تم آزماۓ جاؤ گے بھوک سے, خوف سے مال ک نقصان سے اولاد اور هر نعمت کا ملنا نه ملنا هر صورت آزمائش هے.
* تم پر کوئی بوجھ تمهاری برداشت سے بڑھ کر نهیں ڈالوں گا۔
* بوجھ ڈل جاۓ تو نماز اور صبر سے مدد لو۔
* جو مجھ پر بھروسه کرے میں اس کے لیے کافی هوں۔
* کون هے جو بےقرار کے دل کی دعا سنتا هے جب که وه پکارے۔
اب یہ سوچنا ہمارا کام ہے کہ ہمیں شیطان کے بناۓ ڈیپریشن کا حصہ بننا ہے؟ وه تو مایوس هے کیونکه اس نے نافرمانی کی ہے اور بےبس بھی ہے کیونکه جسکا الله نهیں اس کا کوئی بھی نهیں۔
الحمدلله همارے پاس تو الله رحیم جیسی هستی کا ساتھ هے۔


کیسے هم اپنے آپ کو ڈیپریشن سے بچائیں۔
1. الله اور اس کی کتاب قرآن مجید سے اپنا رابطه مضبوط کریں۔
2. هر چیز ،کام، اور بات کا صرف مثبت پہلو دیکھیں۔
3. یہ ضروری نهیں که جو کوشش کی هے اس کے نتائج بھی ویسے ہی ملیں جیسا که ہماری سوچ ہے۔
4. اس بات کو یاد رکھیں کہ کسی چیز کے نه هونے میں بھی کوئی مصلحت ہی ہے۔ الله کے بارے میں ہمیشہ بهترین گمان رکھیں۔
5. ایسے لوگوں سے اپنے دل کی بات یا اپنی مایوسی کا اظہار بلکل نہ کریں جو خود مایوسی کا شکار ہیں بلکه ایسے لوگوں سے بات کریں جو آپ کو مثبت رویے کی طرف لے کر جائیں.
7. حقیقت کو قبول کرنے میں جلدی کریں۔ یه نهیں هوسکتا, ایسا کیسے هو سکتا هے۔ ایسے جملے اور سوچ ڈیپریشن کی شکل اختیار کر جاتے هیں۔
الله نه کرے اگر کسی کو ڈیپریشن هے تو وه ضرور یہ کام کرے۔


1. الله سے رجوع کریں اور الله کی طرف ڈوریں۔
2. حوصلہ بڑھانے والے اور بہتر سوچ رکھنے والے لوگوں کی کمپنی میں بیٹھیں۔
3. تلاوت سنیں اور بلند آواز میں تلاوت کریں۔
4. تنها رهنے سے پرهیز کریں۔
5. اپنے منفی رویے اور سوچ کو کسی کاغذ پر منتقل کریں اور جلا دیں یا پھاڑ دیں۔
6۔ کوشش کریں کہ ہمیشہ تازه پھل اور زیادہ پانی کا استعمال کریں۔
الله آپ سب کا حامی و ناصر هو

0 Reviews
Blogs, Vlogs iGreen Bottom Image