فیصل آباد میں پیرا گلائیڈنگ

فیصل آباد کی تاریخ میں پہلی مرتبہ شہریوں کو پیرا گلائیڈنگ سے لطف اندوز ہونے کا موقع فراہم کیا جا رہا ہے

فیصل آباد میں پیرا گلائیڈنگ Paragliding In Faisalabad

فیصل آباد کی تاریخ میں پہلی مرتبہ شہریوں کو پیرا گلائیڈنگ سے لطف اندوز ہونے کا موقع فراہم کیا جا رہا ہے۔پیرا گلائیڈنگ مینیا گروپ کی جانب سے فیصل آباد کی تحصیل چک جھرہ میں رواں ماہ کی اٹھائیس، انتیس اور تیس تاریخ کو صبح 9 تا شام 7 بجے تک یہ سلسلہ جاری رہے گا۔اس کھیل میں عام طور پر پہاڑ کی چوٹی یا بلند مقام سے ایک بڑے پیرا شوٹ کے ذریعے ہوا میں پرواز کی جاتی ہے۔نو آموز افراد کو پیرا گلائیڈنگ کے لیے ایک پائلٹ فراہم کیا جاتا ہے جو ٹیک آف کے دوران گلائیڈر کے ساتھ ہی اڑان بھرتا ہے اور گلائیڈر کو سنبھالنے کا کام کرتا ہے تاکہ شہری محفوظ طریقے سے اس کھیل کا لطف اٹھا سکیں۔اس ایونٹ کے آرگنائزر فہد حسن ہیں جن کا تعلق خیبر پختونخواہ کے ضلع کوہاٹ سے ہے اور وہ اپنے چھ دیگر ساتھیوں کے ہمراہ گزشتہ پانچ سال سے اس کھیل کی ترویج کر رہے ہیں۔سجاگ سے بات کرتے ہوئے فہد نے بتایا کہ وہ اسلام آباد، لاہور اور کراچی جیسے بڑے شہروں میں کامیابی سے ایونٹ منعقد کروا چکے ہیں۔ تاہم ان کا گروپ فیصل آباد میں پہلی مرتبہ یہ سہولت فراہم کر رہا ہے۔

 Paragliding In Faisalabad Enjoyed By People


پیرا گلائیڈنگ کے لیے پیرا شوٹ کو گاڑی کے ذریعے ہوا میں ٹیک آف کروایا جائے گاپیرا گلائیڈنگ کے لیے پیرا شوٹ کو گاڑی کے ذریعے ہوا میں ٹیک آف کروایا جائے گا-


ان کا کہنا تھا کہ پیرا گلائیڈنگ کے لیے دو طریقے رائج ہیں۔ پہاڑی علاقوں میں پہاڑ کی بلندی سے ٹیک آف کیا جاتا ہے مگر میدانی علاقوں میں مختلف طریقہ اپنایا جاتا ہے۔'میدانی علاقوں میں زمین سے ہی اڑان بھری جاتی ہے جس کے لیے پائلٹ اور پیرا گلائیڈر کو رسی اور گاڑی کی مدد سے ہوا میں ٹیک آف کروایا جاتا ہے۔'فہد کے مطابق اس کھیل میں بارہ سال یا اس سے بڑی عمر کے افراد حصہ لے سکتے ہیں اور ایک بار پیرا گلائیڈنگ کرنے کے چارجز چھ ہزار روپے ہیں۔ اس دوران شہریوں کو اٹھارہ سے بیس منٹ تک ہوا میں رہنے کا موقع ملتا ہے اور وہ پرندوں کی طرح ہوا میں اڑنے کا لطف لے سکتے ہیں۔حفاظتی امور پر کیے جانے والے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وہ گزشتہ چھ سال سے ملک کے تمام بڑے شہروں میں شہریوں کو پیرا گلائیڈنگ کروا رہے ہیں اور اب تک کوئی ایک بھی ایسا واقع نہیں ہوا جس میں اڑان کے دوران یا لینڈ کرتے ہوئے کسی شخص کو خراش بھی آئی ہو۔'ہمارے پائلٹس انتہائی تجربہ کار ہیں جو اس پورے عمل کے دوران شہریوں کے ساتھ ہوتے ہیں اور گلائیڈر کو سنبھالنے کے لیے پوری طرح سے تربیت یافتہ ہیں۔'

Enjoying The Paragliding in Faislabad


نو آموز افراد کو پیرا گلائیڈنگ کے لیے پائلٹ فراہم کیا جاتا ہے نو آموز افراد کو پیرا گلائیڈنگ کے لیے پائلٹ فراہم کیا جاتا ہے-


مزید گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ وہ ہر شہر میں انتظامیہ کی باضابطہ اجازت حاصل کرنے کے بعد ہی پیرا گلائیڈنگ کرتے ہیں جبکہ اس مقصد کے لیے جگہ کا بھی خاص خیال رکھا جاتا ہے۔فہد کا کہنا تھا کہ پاکستان میں پیرا گلائیڈنگ کا کھیل نوے کی دہائی میں زیادہ مقبول ہوا لیکن پاکستان کے بڑے شہروں میں اس کھیل کی ترویج کے لیے کچھ نہیں کیا گیا اس لیے وہ شہریوں کو پیرا گلائیڈنگ سے آشنا کروانا چاہ رہے ہیں۔'ہم نے فیصل آباد کے لوگوں کے لیے ایک موقع فراہم کیا ہے کہ وہ بغیر کسی پہاڑی علاقے میں جائے اپنے شہر میں رہتے ہوئے پیرا گلائیڈنگ جسے کھیل کا مزا لوٹ سکتے ہیں۔'آخر میں انہوں نے بتایا کہ ہوا میں پیرا شوٹ اڑانے کا یہ سلسلہ تین دن تک جاری رہے گا اور جو افراد اس کھیل میں حصہ لینا چاہیں وہ ان کے فیس بک پیج یا اس پر دیئے گئے موبائل نمبر کے ذریعے رابطہ کر سکتے ہیں۔

0 Reviews
Blogs, Vlogs iGreen Bottom Image