سکولوں میں بچوں کے رقص پر پابندی

پنجاب حکومت نے سکولوں میں بچوں کے رقص پر پابندی لگا دی ہے.

پنجاب سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ (پی ایس ای ڈی) نے صوبے میں تمام نجی اور سرکاری سکولوں میں طلباء کی طرف سے رقص کے کرنے پر پابندی لگا دی ہے. یہ انسانی فطرت ہے کہ وہ تفریح، ناچنا، گانا بجانا اور موج مستی کرنا پسند کرتا ہے. پر جب یہ حد سے بڑھ جائے تو یہ انسان کی کامیابی میں رکاوٹ بن جاتی ہے. اور اسی وجہ سے پنجاب حکومت نے سکولوں، کالجوں اور ینورسٹیوں میں رقص پر پابندی لگا دی ہے. پاکستان میں کبھی سکولوں، کالجوں اور ینورسٹیوں میں بچے اور نوجوان صحت مندانہ سرگرمیوں میں حصہ لیتے تھے.

child

اس کی جگہ تعلیمی میدان میں سفاک کارباریوں نے اپنی جگہ بنا لی. اور بچوں کو اپنی آمدن کا ذریعہ بنا لیا. اور روز نئی نئی سکول کی تقریبات اور اس میں ناچ گانا شروع ہو گیا ہے. جس سے بچوں میں پڑھائی کی طرف دھیان کم اور ناچ گانا کی طرف زیادہ ہو گیا ہے. کچھ ماہرین کا خیال ہے کہ بچوں میں رقص کرنے سے ان کی جنسی خواہشات بڑھتی ہیں. پی ایس ای ڈی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر زاہد بشیر گورایا نے کہا کہاس سکول کا لائسنس معطل کر دیا جائے گاجو سکول کسی بھی تقریب میں رقص کی اجازت دےگا. زیادہ تر ٹیچرز ڈے ، پیرنٹس ڈے اور انعامات و نتائج کے دن بچے رقص کے ذریعے مہمانوں کا استقبال کرتے تھے ، جو کسی بھی طرح مہذب نہیں لگتا تھا.

dance

اس بلاگ کے بارے میں اپنی رائے کمینٹ سیکشن میں ضرور دیجئے گا.

0 Reviews
Blogs, Vlogs iGreen Bottom Image