ایف اے ٹی ایف (FATF) اور پاکستان (PAKISTAN)

  •   0
  •   Amna Ellahi
  •   0
  •   230
ڈونالڈ ٹراپ پاکستان کو گلوبل دہشت گردی کی فہرست میں ڈالنے میں ناکام رہے

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف)(FATF)

ایک عالمی ادارہ ہے جو جی سیون (G7) ممالک کے یکجہتی ہونے پر بنایا گیا ہے. جو منی لانڈرنگ اوردہشت گردوں کی مالی امداد کی نگرانی کرتا ہے. تاہم پاکستان اس ادارے کا براہِ راست رکن نہیں ہے.یہ غیر سرکاری ادارہ ہےاور کسی ملک پر پابندی عائد نہیں کرسکتا لیکن گرے(GREY) اور بلیک(BLACK) کیٹیگری(CATEGORY) واضع کرتا ہے۔

اس کا اثر

انسداد منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کے خلاف قابل قدر اقدامات کی صورت میں اس ملک کو گرے(GREY) کیٹیگری میں شامل کیا جاتا ہے جبکہ کسی ملک کی جانب سے منی لانڈرنگ کے خلاف کوئی اقدامات نہیں اٹھائے جاتے تو اسے بلیک(BLACK) کیٹیگری میں شامل کر دیا جاتا ہے جس کے بعد بین الاقوامی سطح پر زرِمبادلہ کی نقل و حرکت اور ترسیل میں غیر معمولی مشکلات کا سامنا ہوتا ہے۔اورکسی بھی ملک کے لئے اکیلے مقابلہ کرنا بہت مشکل ہوجاتا ہے.

تھنک ٹینک

جب یہ معاملہ تھنک ٹینک کے پاس آیا تو انہوں نےاپنے3 ماہریں کے سامنے رکھا ۔تھنک ٹینک میں شامل تینوں ماہرین نے واضح کہا تھا کہ پاکستان کو دہشت گردوں کے معاون ممالک کی فہرست میں شامل کرنے سے امریکا کی پریشانیوں میں کمی نہیں آئے گی، ایسا کرنے سے امریکا اسلام آباد(GOVERNMENT OF PAKISTAN) کو اپنی پالیسی میں تبدیلی کے لیے مجبور نہیں کر سکتے اور نہ ہی امریکا افغانستان میں اپنے ممکنہ مقاصد کے حصول میں کامیابیکی طرف بڑھ سکے گا ۔واچ لسٹ میں نام شامل ہونے سے پاکستانی معیشت پر منفی اثرات مرتب ہونے کا خدشہ بھی تھا.

خواجہ آصف وزیر دفاع

نے 20فروری2018 کوسوشل میڈیا پر ٹوئٹ کیا تھا '' امریکی قرارداد کے خلاف پاکستان کی محنت رنگ لے آئی اور کہا کہ پاکستان کے معاملے پر کوئی اتفاق رائے سامنے نہیں آیا۔انہوں نے مزید کہا کہ اجلاس میں 3 مہینوں کی مہلت کی تجویز پیش کی گئی اور ایف اے ٹی ایف(FATF) کے ماتحت ادارے ایشیا پیسفک گروپ(ASIA PECIFIC GROUP) سے جون میں دوسری رپورٹ کے لیے انتظار کا کہا گیا۔خواجہ آصف نے مزید لکھا کہ ان کے مشکور ہیں جنہوں نے ہماری مدد کی. ’ایف اے ٹی ایف‘ قرارداد( RESOLOUTIN FATF) ک سلسلے میں جن ملکوں نے پاکستان کا ساتھ دیا اُن میں ’’سعودی عرب، ترکی اور چین شامل ہیں‘‘۔

بہرحال ابھی یہ معاملہ ختم نہیں ہوا، انسدادِ منی لانڈرنگ کے نگراں ادارے کی جانب سے پاکستان کا نام دہشت گردوں کے معاون ممالک کی فہرست میں ڈالے جانے کا معاملہ تین ماہ تک کے لیے مؤخر ہوگیا ہے.

ٹیگز :

0 Reviews
Blogs, Vlogs iGreen Bottom Image